Loading...
HOME2020-08-19T13:17:51+00:00

WAQAR-E-PAKISTAN

PORTFOLIO

وقارِ پاکستان لیٹریری ریسرچ کلاؤڈ

25 سالہ ، تعلیمی ، کاروباری ، سماجی اور ادبی مسافت

معاونین: 100 کارپوریٹ فورمز، 100 لیٹریری فورمز، 100 شعراء ، 100 شاعرات، 500 قلم کار، 70،000 ریڈرز اینڈ فالوورز

کانٹینٹ: 100 پبلیکیشنز، 10 ہزار سے زیادہ پبلیشڈ صفحات، 250 سے زیادہ نیوز پیپز اینڈ میگزین سرکل

کل 5 لٹریری ریسرچ سیریز، گوادر نیوزبکس، بیسٹ لائف نوٹس، وقارِسخن، ایم ایس نالج سیریز، شارٹ بائیو گرافیز

پاٹنرز: مارول سسٹم ، ادب سرائے انٹرنیشنل اور سوشو آن

www.marvelsystem.com | www.adabsaraae.com : www.socioon.com

0
Corporate Forums
0
Literary Forums
0
Poets & Poetesses
0
Authors & Writers
0
Readers & Followers
0
Published Pages

WAQAR-E-PAKISTAN

PRESENTATION

WAQAR-E-PAKISTAN

INFOMENTARY

WAQAR-E-PAKISTAN

TOP VIDEO COLLECTION

*آواز اور انتخاب... عامر عسکری اینکر پرسن ریڈیو ایف ایم 102 اسلام آباد وائس آف پوٹھوہار *
*مادرِ دبستانِ لاہورمحترمہ ڈاکٹر شہناز مزمل صاحبہ کی تصنیف"عہدِ شہناز"(سلسلہء کلیات) کے
حصہ دوئم " ندائے عشق (نظمیات)" سے لی گئی ایک نظم پاکستان کےایک ابھرتے ہوئے شہر گوادر کے نام
............................................................
جی چاہتا ہے خود پہ مجھے اختیار ہو
جی چاہتا ہے دور تلک ہو حسین شام
بادل سا ہو وجود مرا آسمان پر
میں بھی ہوا کے دوش پہ ہر سو اُڑا کروں
اور پر لگا کے سارا جہاں دیکھتی رہوں
ہلکی ہوا اس قدر یہ مری روح مری جان
اس نیلے آسماں پہ مرا اختیار ہو
میرا وجود اس سمے مجھ پر نہ بار ہو
چاہوں تو ساتھ رات کے تارے چنا کروں
چاہوں تو چاندنی کی حسیں ہر کرن کے ساتھ
میں بھی زمیں کے پانیوں پر عکس بن سکوں
میں اس کی موج موج میں خود کو بکھیر دوں
گہرے حسین ساگروں کے ساتھ بہہ سکوں
میں تہہ میں اس کی سیپیوں کے ساتھ رہ سکوں
جی چاہتا ہے خود پہ مجھے اختیار ہو
میرا وجود اس سمے مجھ پہ نہ بار ہو
یہ سوچتی ہوں میں بھی کبھی کھل کے ہنس سکوں
میری ہنسی میں ساتھ میرے آسمان ہو
ہنستی ہوئی زمین ہو ہنستا جہان ہو
میں مسکراؤں گر تو فضائیں بھی ہنس پڑیں
گر آنکھ میری نم ہو تو پھر ساتھ ساتھ
یہ آسماں پہ تیرتے بادل برس پڑیں
یہ تتلیاں یہ جھیل سمندر یہ کوہسار
پھیلا جو نظر آتا گوادر کا یہ حصار
خود اپنی وسعتوں میں مجھے بھی سمیٹ لے
جی چاہتا ہے خود پہ مجھے اختیار ہو
میرا وجود اس سمے مجھ پرنہ بار ہو
...........................................................
*میاں وقارالاسلام کی تصنیف سوزِمحشر سے پاکستان کے معاشی مستقبل "شہرِ گوادر" کے نام ایک خوبصورت غزل*
.............................................................
اک طرف ہیں مصیبتوں کے پہاڑ
دوسری سمت رحمتوں کے پہاڑ
صبر والے تو صبر کرتے ہیں
اور سہتے اذیتوں کے پہاڑ
صبر کرتے نہیں ہیں نا شکرے
دیکھتے کب وہ نعمتوں کے پہاڑ
سوچ کے راستوں پہ دیکھے ہیں
رب کی واضح نشانیوں کے پہاڑ
جو ہے ملتی زمینِ شکر وقار
تو برستے ہیں بادلوں کے پہاڑ

شاعر: میاں وقارالاسلام
تصنیف: سوز محشر
Show More
1 of 2 Next

WAQAR-E-PAKISTAN

SHORT BIOGRAPHIES

CONTACT US

رابطہ: میاں وقارالاسلام ، فاؤنڈر وقارِ پاکستان

www.mianwaqar.com
ای میل اور موبائل نمبر:

mianwaqarpk@yahoo.com | 03004102774
ویب سائیٹ اور سوشل میڈیا پیج
www.waqarepakistan.com
https://www.facebook.com/waqarepak